پیپلزپارٹی رہنما لیزامہدی پرکورونا لاشیں اسپتال سے دلوانے کے عوض رقم وصولی کا سنگین الزام ، جانیں

پاکستان ٹپس! پیپلزپارٹی کی لیزامہدی کو کورونا لاشیں اسپتال سے دلوانے کے بدلے پیسے وصول کرنے کے الزام میں شوز کاز نوٹس جاری کردیا گیا، ان پر غلط عہدے کا استعمال اور متعدد شکایات بھی ہیں۔تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی کی ڈپٹی سیکریٹری شعبہ اطلاعات پر کورونا لاشیں اسپتال سے دلوانے کے عوض رقم وصول کرنے کا سنگین الزام لگ گیا،

صدر پی پی پی شعبہ خواتین شاہدہ رحمانی نے لیزہ مہدی کو شوکاز نوٹس جاری کردیا، لیزامہدی کو نوٹس عہدے کے غلط استعمال اور متعدد شکایات پر دیا گیا۔ شوکاز نوٹس میں شاہدہ رحمانی کا کہنا ہے کہ لیزا مہدی پر کورونا میت دلوانے کے بدلے رقم وصولی سمیت دیگر شکایات ہیں، ان کو دھوکہ دہی اور رشوت خوری پر شوکاز نوٹس جاری کیا گیا۔ صدر پی پی پی شعبہ خواتین شاہدہ رحمانی کی جانب سے الزامات واضح کیے گئے اور کہا گیا کہ لیزہ مہدی نے کورونا سے انتقال کرنے والیجہانگیر کی میت کے پیسے وصول کیے۔ شوکاز نوٹس میں بتایا گیا جہانگیر کی میت دلوانے کے ڈھائی لاکھ، ادریس کی میت کے 50 ہزار لیے، دونوں افراد کیاہل خانہ سے زبردستی پیسے وصول کیے گئے جبکہ احمد جاوید نامی شخص کو ملازمت دلوانے کے 4 لاکھ 80 ہزار روپے لیے گئے اور رشوت وصول کر کیاحمدجاوید کو جعلی تقرری لیٹر تھما دیا گیا۔ لیزامہدی کو 3دن کے اندر جواب جمع کرانے کی ہدایت کی گئی تھی تاہم 3دن گزرنے کے بعد بھی لیزامہدی نے جواب جمع نہیں کرایا، لیزامہدی اور شوہر حسنین کے خلاف تیموریہ تھانے میں مقدمہ درج ہے۔

loading...

 

اپنی رائے کا اظہار کریں