بے بسی کی انتہا ادویات کی قیمتوں میں اضافہ کیو ں کیا گیا ؟ وزیراعظم کےمعاون خصوصی برائے صحت نے افسوسناک وجہ بتا دی

پاکستان ٹپس!وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان نے جان بچانے والی ادویہ کی قیمتوں میں اضافے کے حکومتی فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا ہے کہ مارکیٹ سے غائب سے ہونے والی دواوں کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر فیصل سلطان نےکہا کہ جن دواوں کا ذکر ہو رہا ہے۔

سستی لائف سیونگ اور پرانے فارمولے پر ہیں ان دواوں کی قیمتوں پر مناسب تبدیلی نہ آنے کی وجہ سے مارکٹ سے غائب ہو جاتی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ مارکیٹ میں ناپید ادوایات کو تھوڑے سے اضافے کی ضرورت تھی۔ قیمتوں میں مناسب اضافہ نہ ہونے کے باعث یہ دوائیں دستیاب نہیں ہوتیں۔ غائب ہونے والی دوائیں بلیک میں ملنے لگتی ہیں۔ وہ ادویات جو لوگوں کو مہنگی مل رہی تھی اب مناسب وقت میں دستیاب ہو گئی۔معاون خصوصی برائے صحت نے مزید کہا کہ حکومت اور ڈریپ کا کام دواوں کی دستیابی کو یقینی بنانا بھی ہے۔ ہم نے ادوایات کی قیمتیں اتنی بڑھائی ہیں کہ لوگوں تک پہنچ سکیں۔ ہم ادوایات ساز کمپنیوں کے دباو میں نہیں آئے۔ ایک نئی پرائسنگ پالیسی پر کام کر رہے ہیں۔ دواوں کی قیمتوں کی لسٹ ویب سائٹ پر لگائی جائے گئی۔ تمام صحت کے اداروں میں اصلاحات لائی جارہی ہیں۔ کہا کہ جن دواوں کا ذکر ہو رہا ہے سستی لائف سیونگ اور پرانے فارمولے پر ہیں ان دواوں کی قیمتوں پر مناسب تبدیلی نہ آنے کی وجہ سے مارکٹ سے غائب ہو جاتی ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ مارکیٹ میں ناپید ادوایات کو تھوڑے سے اضافے کی ضرورت تھی۔ قیمتوں میں مناسب اضافہ نہ ہونے کے باعث یہ دوائیں دستیاب نہیں ہوتیں۔ غائب ہونے والی دوائیں بلیک میں ملنے لگتی ہیں۔ وہ ادویات جو لوگوں کو مہنگی مل رہی تھی اب مناسب وقت میں دستیاب ہو گئی۔

loading...

معاون خصوصی برائے صحت نے مزید کہا کہ حکومت اور ڈریپ کا کام دواوں کی دستیابی کو یقینی بنانا بھی ہے۔ ہم نے ادوایات کی قیمتیں اتنی بڑھائی ہیں کہ لوگوں تک پہنچ سکیں۔ ہم ادوایات ساز کمپنیوں کے دباو میں نہیں آئے۔ ایک نئی پرائسنگ پالیسی پر کام کر رہے ہیں۔ دواوں کی قیمتوں کی لسٹ ویب سائٹ پر لگائی جائے گئی۔ تمام صحت کے اداروں میں اصلاحات لائی جارہی ہیں۔

 

اپنی رائے کا اظہار کریں